Online News Portal

محبتوں کا عالمی دن: راحت فتح علی خان مداحوں کو محظوظ کرنے کیلئے تیار

0 20

کراچی: عالمی شہرت یافتہ گائیک اور سروں کے سلطان استاد راحت فتح علی خان 14 فروری کو ایک بار پھر اپنی آواز کا جادو جگائیں گے اور دنیا بھر میں ان کے مداح رومانوی گیتوں سے لطف اٹھائیں گے۔

نامور پاکستانی گلوکار راحت فتح علی خان 14 فروری کو محبتوں کے عالمی دن (ویلنٹائن ڈے) کے موقع  پر پہلی بارلائیو اسٹریم کے ذریعے دنیا کے درجنوں ممالک میں آواز کا جادو جگائیں گے۔

راحت فتح علی خان 14 فروری کو رات 8 بجے سے دو گھنٹے تک اپنے پیار بھرے گیتوں سے مداحوں کو محظوز کریں گے۔

وہ پاکستان کے پہلے فن کار ہیں جنہیں سب سے زیادہ یوٹیوب پر دیکھا گیا ہے اور ان کا گایا ہوا گیت “ضروری تھا” کو یوٹیوب پر سو کروڑ سے زائد بار دیکھا اور پسند کیا گیا ہے۔

برطانیہ کی آکسفورڈ یونی ورسٹی سے موسیقی میں پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کرنے والے عالمی شہرت یافتہ گلوکار استاد راحت فتح علی خان کے گائے ہوئے زیادہ تر گیت روماوی اور محبت سے بھرے ہوئے ہوتے ہیں۔ ان کے گائے ہوئے گانوں کو فلموں اور ٹیلیویژن ڈراموں میں غیر معمولی شہرت حاصل ہوئی ہے۔

راحت فتح علی خان کا کہنا ہے کہ کورونا کے ساتھ جو زندگی گزر رہی ہے وہ بہت خطر ناک ہے۔ لاک ڈاؤن کے دوران سب سے زیادہ اپنے مداحوں اور پیار کرنے والوں کو یاد کیا اور سب کے لیے دعا کی۔ اللہ تعالیٰ ان کو اپنی امان میں رکھے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بچپن سے ہی استاد نصرت فتح علی خان نے انہیں سچی موسیقی کی تربیت دی۔ خود کبھی عشق نہیں کیا بلکہ ساری زندگی موسیقی سے عشق کیا۔ زندگی کا ایک ایک لمحہ محبت میں ڈوبا ہوا ہے۔

14  فروری کو ویلنٹا ئن ڈے کے موقع پر آمریکا کی درجنوں ریاست سمیت یورپ، متحدہ عرب امارات، سری لنکا،  بھارت، اسٹریلیا، نیوزی لینڈ، ساوتھ افریکا اور دیگر ممالک میں موجود میرے لاکھوں مداح لائیو اسٹریم کے ذریعے گھر بیٹھے رومنٹک گیت سن سکیں گے۔

بین الاقوامی میوزک پروڈیوسر سلمان احمد نے بتایا  کا کہنا ہے کہ راحت فتح علی خان دو گھنٹے تک مسلسل پرفارمینس دیں گے۔ امید ہے یہ نیا تجربہ کورونا کی اداس کیفیت کو دور کرنے میں نمایاں کردار ادا کرے گا۔

پاکستان کے نامور گلوکار استاد راحت فتح علی خان 9 دسمبر 1974 کو فیصل آباد میں پیدا ہوئے ہیں۔ وہ ایک پاکستانی موسیقار اور گلوکار ہیں جبکہ وہ بنیادی طور پر پنجابی قوالی کے ایک گلوکار ہیں۔

راحت فتح علی خان کے والد کا نام فرخ فتح علی خان ہے اور وہ استاد نصرت فتح علی خان کے بھتیجے ہیں۔

راحت فتح علی خان قوالی کے علاوہ غزل اور ہلکی پھلکی موسیقی بھی گاتے ہیں۔ وہ بڑے پیمانے پر پاکستان، بھارت کے ساتھ ساتھ دنیا بھر کا دورہ کر کے اپنی کارکردگی کا مظاہرہ کر چکے ہیں۔

پاکستان کے نامور گلوکار استاد راحت فتح علی خان کو 2019 میں آکسفورڈ یونیورسٹی کی جانب سے موسیقی کے شعبے میں پی ایچ ڈی کی ڈگری سے نوازا گیا، انہوں نے اپنے ملک اور خاندان کا نام پوری دنیا میں روشن کیا۔

موسیقی کے گھرانے میں آنکھ کھولنے کی وجہ سے سُر، سنگیت اور راگنیاں ان کی گھٹی میں شامل ہوتی گئیں۔ راحت فتح علی خان کم عمری ہی سے اپنے چچا استاد نصرت فتح علی خان کے ساتھ سماع کی محفلوں میں سنگت کرنے لگے تھے۔ اس زمانے کی تربیت آج استاد راحت فتح علی خان کے قدم قدم پر کام آ رہی ہے۔

2013 میں بالی وڈ کی اداکارہ و پروڈیوسر پوجا بھٹ نے اپنی فلم ’’پاپ‘‘ میں راحت فتح علی خان کی آواز میں ایک گیت ’’من کی لگن‘‘ شامل کیا تو ہر طرف ان کی آواز کی دھوم مچ گئی۔

2013 سے شروع ہونے والا یہ سفر آج بھی بالی وڈ میں پوری توانائی اور مقبولیت کے ساتھ جاری ہے۔ علاوہ ازیں انہوں نے کئی پاکستانی ڈراموں کے ٹائٹل سونگ بھی گائے جنہیں بے حد پسند کیا گیا۔

دسمبر 2014ء میں اوسلو میں منعقدہ نوبیل پیس پرائز کی تقریب میں صُوفیانہ کلام پیش کر کے پاکستان کا نام عالمی سطح پر روشن کیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.