Online News Portal

ڈریاس فلیٹن نے جب نوکری سے استعفیٰ دیا تو انہیں اندازہ نہیں تھا کہ ملنے والے واجبات کس طرح ان کے لیے درد سر بن جائیں گے۔

0 72

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی ریاست جارجیا کے رہائشی اینڈریاس فلیٹن نے جب نوکری سے استعفیٰ دیا تو انہیں اندازہ نہیں تھا کہ ملنے والے واجبات کس طرح ان کے لیے درد سر بن جائیں گے۔جاب چھوڑنے کے بعد جب انہیں فون پر اطلاع دی گئی کہ واجبات کوریئر کے ذریعے گھر بھیج دیئے گئے ہیں تو وہ بہت خوش تھے کہ آخری تنخواہ اور دیگر واجبات یکشمت ملیں گے۔ایک ملنے کی امید پر جب وہ اپنے گھر پہنچے تو ڈاکیا وہاں چیک کے بجائے سکوں سے بھری ایک ٹرالی لیے انتظار کر رہا تھا۔یہ صورت حال اینڈریاس کے لیے صرف حیران کن ہی نہیں بلکہ پریشان کن بھی تھی۔ 915 ڈالرز کے بقایا جات سکوں کی صورت میں دیئے گئے تھے اور وہ بھی تیل اور چکنائی سے اٹے ہوئے تھے۔اینڈریاس کے پاس ان سکوں کو وصول کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں تھا تاہم اب انہیں سکوں کو استعمال کرنے کے لیے پہلے ایک ایک کرکے سکوں کو اچھی دھو کر چکنائی ہٹانا ہوتا ہے جس میں کافی وقت لگ جاتا ہے۔کمپنی کے اعلیٰ عہدیدار اسے اپنے سابق کولیگ سے محض ایک مذاق قرار دیتے ہیں لیکن اینڈرسن کا کہنا ہے کہ یہ ایک بچکانہ حرکت ہے جس کے خلاف وہ محکمہ محنت و افرادی قوت سے رجوع کریں گے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.